مشکلات یا قدرت کے تحفے

Home/Learn/مشکلات یا قدرت کے تحفے

مشکلات یا قدرت کے تحفے

آپ کو محسوس ہونے والا درد آپ کو کوئی پیغام دیتا ہے۔ اسے سننے کی کوشش کریں۔ مولانا رومی

ہم سب کشش ثقل کے تصور کو جانتے ہیں۔ یہ کشش ثقل نیوٹن کے دریافت کرنے سے لاکھوں سال پہلے بھی موجود اور ہم سب کے ذہنوں میں راسخ چلی آرہی ہے۔  یہ کشش ہمیں زمین کی طرف  کھینچتی ہے اور اس کے باوجود زمین پر چل اور پھر سکتے ہیں۔

لیکن سوچیں! اگر زمین میں  یہ کشش ثقل بالکل نہ ہوتی؟

دلچسپ بات یہ ہے کہ جب خلاباز لوگ خلا سے زمین پر واپس آتے ہیں تو وہ زمین پر عام انسانوں کی طرح چل اور پھر نہیں سکتے۔ یہی نہیں بلکہ یہ بات بھی نوٹ کی گئی ہے کہ انہیں زمین پر آنے کے  بعد اپنی زبانیں بھی بھاری لگنے لگتی ہیں اور انھیں باتیں کرنے میں بھی  دشواری پیش آتی  ہے ۔ چنانچہ پھر انھیں خصوصی معاونین کی مدد درکار ہوتی ہے جن کی نگہداشت کی بدولت  یہ پھر سے آہستہ آہستہ عام لوگوں کی طرح چلنا  پھرنا اورباتیں کرنا سیکھتے ہیں۔

اس سے پتا چلا کہ ہم خود میں صرف اتنی ہمت پیدا کرتے ہیں جتنی ہمت ہمیں کسی مسئلے یا مصیبت سے مقابلہ کرنے کے لیے درکار ہوتی ہے۔

دوسرے لفظوں میں کہا جائے تو ہم چلنے کی طاقت اور ہمت اس لیے رکھتے ہیں کیوں کہ زمین کی کشش ہمارے چلنے کے عمل میں مزاحمت کرتی ہے۔ اب سوچیں کہ اگر زمین بھی اپنی اس کشش کی مزاحمت کو ختم کر دے اور خلا کی طرح بغیر کشش کے رہ جائے تو ہم فی الفور چلنے سے معذور ہو جائیں گے اور چلنے کی طاقت سے محروم ہو جائیں گے، کیونکہ اس وقت ہمیں ایک دوسرے توازن کا سامنا ہوگا۔

انسان پر مصیبتیں ہر طرح کی آتی ہیں، جسمانی، جذباتی اورذہنی۔ لیکن ایک بات ان سب مصیبتوں میں مشترک ہوتی ہے وہ یہ کہ  ان مصیبتوں سے مقابلہ کرکے ہمیں ایک نئی ہمت اور طاقت حاصل ہوتی ہے۔ یہی ہمت اور یہی طاقت قدرت کا پیش کردہ تحفہ ہے۔

2020-10-14T16:38:00+00:00 Learn|